کرپٹ ذمہ دار افراد کی وجہ سے آج پاکستان سنگین بحرانوں میں پھنسا ہوا ہے صوفی مسعوداحمدصدیقی

 مہنگائی، غربت وافلاس ،سٹریٹ کرائمز، ڈکیتیوں،اغوابرائے تاوان اور لوٹ مارکی شرح میں بے پناہ اضافہ ہوچکاہے۔محمد ناصر علی گل نقشبندی

عدلیہ مختلف محکموں میں کرپٹ افراد کے خلاف ازخود نوٹس لیکر انہیں نااہل قرار دے۔پیر سید احمدندیم شاہ 

ملک کی بگڑتی ہوئی صورتحال کے ذمہ دار سیاسی جماعتوں اور حکومتی اداروں میں موجود کرپٹ افرادہیں۔محمد ریحان نقشبندی

چارسالہ حکومتی دورمیں مہنگائی کے سابقہ تمام ریکارڈ ٹوٹ چکے ہیں۔پیرطریقت محمد اصغر نقشبندی

فیصل آباد ( )ملک کی بگڑتی ہوئی صورتحال کے ذمہ دار تمام سیاسی جماعتوں اور حکومتی اداروں میں موجود کرپٹ افرادہیں۔جب الیکشن کا وقت آتا ہے تو یہی لوگ اپنی چاپلوس حرکتوں سے عوام کو بے وقوف بناکر وقتی طورپر کچھ سہولیات دے کر دوبارہ پھر مسلط ہوجاتے ہیں۔حکومتی اراکین اور اپوزیشن کے اراکین سب ایک دوسرے پر کرپشن کے الزام لگا رہے ہیں ،عوام الناس یہ سمجھنے سے قاصر ہیں کہ کون صحیح اور کون غلط ہے؟ ۔کرپٹ ذمہ دار افراد کی وجہ سے آج پاکستان سنگین بحرانوں میں پھنسا ہوا ہے ۔ذمہ دارکرپٹ لوگوں نے کروڑوں عوام کویر غمال بنارکھا ہے۔پہلے سے بھی زیادہ عوام کومسائل کی دلدل میں پھنسادیاگیا ہے۔ ان خیالات کااظہار امیر تنظیم مشائخ عظام پاکستان صوفی مسعوداحمدصدیقی نے ’’کرپشن مکاؤ،ملک بچاؤ ‘‘احتجاجی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے مزید کہاکہ مہنگائی ،بے روز گاری ،کرپشن ،غربت لوٹ مار ،بجلی گیس کی لوڈشیڈنگ ،انصاف کی فراہمی میں تعطل،عدالتی فیصلوں پر عمل نہ ہونا جیسے گھمبیر مسائل میں گھری مخلوق خدا کے دکھوں کامداواکرنے کیلئے تنظیم مشائخ عظام پاکستان کی طرف سے گزشتہ کئی ماہ سے ’’کرپشن مکاؤ،ملک بچاؤ ‘‘احتجاجی تحریک جاری ہے جس کے ذریعے عوام الناس میں سیاسی شعورکی بیداری پیداکی جارہی ہے تاکہ عوام محب وطن،مخلص اورنیک لوگوں کی پہچان کرسکے اور کرپٹ ،دھوکہ بازاورغدارلوگوں کامحاسبہ کرنے کی جرات کرسکے۔،چارسالہ حکومتی دورمیں مہنگائی میں200سے300فیصدیعنی تمام ریکارڈزٹوٹ چکے ہیں۔خودکشیوں،سٹریٹ کرائمز، ڈکیتیوں،اغوابرائے تاوان اور لوٹ مارکی شرح میں بے پناہ اضافہ ہوچکاہے۔عدلیہ مختلف محکموں میں کرپٹ افرادکیخلاف ازخودنوٹس لیکر انہیں نااہل قراردے۔پاک فوج نااہل حکمرانوں کے خلاف عدالتی فیصلوں پر عمل کروانے میں بھرپور کرداراداکرے۔شرکاء ریلی کے دیگر مقررین میں پیر احسان الحق نقشبندی ، پیر سید احمد ندیم شاہ ،پیر طریقت محمد اصغر نقشبندی ،محمد ناصر علی گل نقشبندی ،محمد ریحان نقشبندی نے کہاکہ اتمام حجت کے طو رپر ہمارے پاس اب صرف یہی حل رہ گیا ہے کہ اپنے رب کے حضور فریاد کریں کہ ’’یا اللہ !اسلام اور پاکستان کونقصان پہنچانے والے ذمہ داروں اورکرپٹ لوگوں کونیست نابودکرکے ایماندارلوگوں کوغلبہ عطافرما۔‘‘یااللہ !پاکستانی عوام کوبحرانوں میں مبتلا کرنیوالوں کاخود ہی احتساب فرماکرنجات عطا فرما! ،اے احکم الحاکمین !ہمیں اسلام اور پاکستان سے محبت کرنے والے مخلص اور صحیح حکمران عطا فرما۔یاارحم الرحمٰین !پاکستان عوام کوصحیح سمجھ بوجھ عطا فرما تاکہ وہ نیک اور صالح لوگوں کاانتخاب کریں۔یا اللہ !ظالموں اور لوٹ مارکرنیوالوں کی اصل حقیقت کوظاہر فرماکرذلت وپستی میں مبتلاکر۔ہم میڈیا کے ذریعے مادیت میں غرق ،مفادپرست ،بے حس ،کرپٹ عناصر کوتنبیہہ کرتے ہیں کہ مظلوموں کی آہوں اور بددعاؤں سے ڈریں اگر یہ لوگ اب بھی غفلت کاشکاررہے اورعوام کے بنیادی مسائل کے حل کی طرف توجہ نہ دی تو مشرق وسطیٰ جیسے حالات پیداہونے میں دیر نہ لگے گی۔یہ عظیم الشان ریلی انتہائی منظم اندازمیں لاثانی سیکریٹریٹ سے شروع ہوکرفوارہ چوک ،گیٹوں سے سلیمی چوک ،جھال خانوآنہ ،جی ٹی ایس چوک،ضلع کونسل ہال ،پریس کلب سے چوک گھنٹہ گھر پہنچی ۔