سلسلہ عالیہ لاثانیہ میں کام کرنیوالوں کو اللہ ورسولﷺ ظاہری وباطنی انعامات،عطاؤں اورکرم نوازیوں سے نوازرہے ہیں۔صوفی مسعوداحمدصدیقی لاثانی سرکار

 یہ اللہ ورسول ﷺ کابہت ہی بڑا کرم ہوتاہے کہ سچے دَرکی بشارت عطا ہوجائے۔ہفتہ وارروحانی تربیتی نشست سے خطاب

خادم مخلوقات،وارثِ فقرودورحاضرکے عظیم روحانی صوفی مسعوداحمدصدیقی لاثانی سرکارنے لاثانی سیکرٹریٹ پرہفتہ وارروحانی تربیتی نشست سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ اللہ تعالیٰ لباسوں اورشکلوں کونہیں بلکہ دلوں کودیکھتاہے،اس لئے جس انسان کی نیت اچھی اورکام میں خلوص ہوگاوہی مقبول بارگاہ ہوگا۔یہ بہت بڑے کرم کی بات ہے کہ اللہ ورسولﷺ اپنے پسندیدہ کام بتارہے ہیں کہ سلسلہ عالیہ لاثانیہ کی نشرواشاعت کریں،ہمیں یہ کام بہت پسند ہے اوریہبہترین صدقہ جاریہ بھی ہے ،یہی وجہ ہے کہ سلسلہ عالیہ لاثانیہ کی نشرواشاعت کرنیوالے پیربھائیوں اورپیربہنوں کی تیزی سے ترقی ہورہی ہے اوراللہ ورسولﷺ انہیں ظاہری وباطنی انعامات ،عطاؤں اورکرم نوازیوں کی بشارتیں عطا فرمارہے ہیں۔جولوگ اللہ تعالیٰ کی راہ میں خرچ کرتے ہیں ان کے دل سخی ہوتے ہیں،اصل سخی وہی ہوتاہے جو دل کاسخی ہوتاہے،بخیل اللہ ورسولﷺ اورجنت سے دورہے ،امیر ی دل کی امیری کانام ہے،سخی اللہ تعالیٰ کا دوست ہوتاہے،بخیل اللہ تعالیٰ کا ولی نہیں بن سکتا،چاہے وہ کتناہی عبادت گزارکیوں نہ ہو۔جس طرح اللہ تعالیٰ سب کچھ جانتے ہیں ،اسی طرح رسول اللہ ﷺ بھی سب کچھ جانتے ہیں ۔سیدالانبیاء حضورنبی کریم روف الرحیم ﷺ آج بھی اپنے غلاموں میں خزانے تقسیم فرمارہے ہیں،آج بھی آقا ﷺ اپنے غلاموں میں ولائیتں تقسیم فرمارہے ہیں۔ سچے دَرکی بشارت عطا ہوجانااللہ ورسولﷺ کابہت ہی بڑاکرم ہے،سلسلہ عالیہ لاثانیہ میں آنیوالوں پر اللہ ورسولﷺ کی خاص نظررحمت اورنظرمحبت پڑتی ہے تو پھر ہی وہ اس پاک نسبت سے نوازے جاتے ہیں اورتیزی سے نوازے جارہے ہیں،اللہ ورسول ﷺ کی ایک نظررحمت ومحبت کا شکرادانہیں کیاجاسکتا۔سچے عقیدے سے ہی بیڑہ پارہوتاہے،فیض کاحصول اتنا آسان ہوگیا ہے کہ چھوٹی چھوٹی باتوں پربڑی بڑی عطاؤں کی بشارتیں دی جارہی ہیں،مقرب مومن (واصل حق )کی بیعت درحقیقت اللہ ورسولﷺ کی ہی بیعت ہوتی ہے اور یہی اللہ کی رسی ہے،جس کے بارے میں قرآن پاک میں فرمایا گیا ہے کہ اللہ کی رسی کومضبوطی سے پکڑ لواورتفرقہ بازی میں نہ پڑیں،جو اس رسی (مومن مقرب ،واصل حق کی بیعت کرنا )کی نسبت میں آجاتے ہیں وہی تفرقہ بازی سے بچ کرصراط مستقیم پر گامزن ہوتے ہیں۔نسبت کرنے سے انسان کے پچھلے تمام گناہ معاف کردئیے جاتے ہیں ،نماز پنجگانہ اوراپنے آقاﷺ کی بارگاہ اقدس میں درودوسلام پڑھنے کی پابندی رکھیں ،جان بوجھ کرایک نماز بھی چھوڑنے والا گناہگارہوتاہے ،نماز چھوٹ جائے تو قضا کرلے پڑھ لیں،چھوڑیں نہیں۔انسان کا آپس میں لین دین کسی صورت معاف نہیں ہوتا،یہ فوراًکلےئر کرنا چاہیے یعنی اگر کسی کاقرض دینا ہے تو کوشش کریں کہ فوری طور پر اس کواداکردیں یہ معاف نہیں ہوتایہ دینا ہی پڑتاہے ،دنیا میں نہیں دیں گے تو آخرت میں تو دینا ہی پڑیگا۔