روحانی طریقہ علاج نے میڈیکل سائنس میں تیزی سے انقلاب برپاکردیاہے۔پروفیسر ڈاکٹر ظہیر الحق قریشی

 روحانی علاج کی بدولت مریضوں میں شفایابی کاتناسب حیران کن حد تک بڑھ گیا ہے۔ڈاکٹر شفقت حسین (کارڈیک سرجن)

بچوں کوبیمارکرنے میں والدین کاغیر ذمہ دارانہ رویہ شامل ہے۔ فری میڈیکل کیمپ میں میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت 
روحانی علاج سے میڈیکل سائنس میں تیزی سے انقلاب آرہاہے، لاعلاج بیماریوں سمیت دیگر متعدی بیماریوں میں روحانی علاج کلیدی کرداراداکررہاہے ،اس کی بنیادی وجہ قرآن وحدیث کی حقیقی روح کوسمجھنے والے فقراکی نگاہ گوہر بارکی تاثیر اوران کی تعلیم وتربیت اوران کی طرف سے عطاکردہ روحانی طریقہ علاج ہے ۔ان خیالات کااظہار سابق چائلڈ اسپیشلسٹ چلڈرن ہسپتال لاہور کے پروفیسر ڈاکٹر ظہیر الحق قریشی نے لاثانی سیکرٹریٹ پر منعقدہ لاثانی فری میڈیکل کیمپ میں میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے مزید کہاکہ بچوں کی بیماریوں میں والدین کاغیر ذمہ دارانہ رویہ شامل ہے ،کیونکہ بچوں کو والدین جیب خرچ دیتے ہیں ،انہی پیسوں سے بچے بازاری چیزیں خرید کرکھاتے پیتے ہیں جس کی بناپر ان کی صحت پر براثر پڑتاہے ،والدین ذمہ دارانہ رویہ اختیار کرتے ہوئے بچوں کوجیب خرچ دیتے وقت احتیاط سے کام لیں تاکہ بچے ناقص ،ملاوٹ شدہ اورصحت کے اصولوں کے منافی اشیاء کوکھانے سے بچ سکیں ۔ڈاکٹر شفقت حسین (کارڈیک سرجن )نے کہاکہ روحانی علاج کی بدولت ہمارے ہاں مریضوں کی شفایابی کاتناسب پہلے سے کہیں زیادہ بڑھ چکاہے ،پہلے ہم مریضوں کوچیک اپ کرنے کے بعد صرف میڈیسن تجویز کردیتے تھے جس کی Ratioاتنی بہتر نہیں تھی ،اب جبکہ اللہ کے فقراکی صحبت نصیب ہوئی ہے اوران کی بارگاہ اقد س سے روحانی طریقہ علاج بھی ساتھ سیکھا ہے تو اس سے مریضوں کواس طریقہ علاج کیساتھ Dealکرتے ہیں تو مریضوں میں شفایابی کاتناسب حیران کن حد تک بہتر ہوچکاہے اوراللہ تعالیٰ مریضوں کوتیزی سے شفاعطا فرمارہاہے ۔ہم اپنے مرشد کریم صدیقی لاثانی سرکارکی ہدایات اورتعلیمات کی روشنی میں پاکستان کے مختلف علاقوں میں موبائل میڈیکل کیمپوں کاسلسلہ گزشتہ کئی سالوں سے مسلسل جاری وساری ہے اورپھر ان کیمپوں کی نگرانی ہمارے لاثانی میڈیکل ونگ کے ماہرڈاکٹر زسرانجام دے رہے ہیں۔یہ کیمپ ان علاقوں میں تیزی سے لگائے جارہے ہیں جہاں کی اکثریت نادار،غریب اورمستحق لوگوں پر مشتمل ہے ،ان کیمپس میں ہماری طرف سے مریضوں کے چیک اپ سمیت تمام میڈیسن فری مہیا کی جاتی ہے ۔