ابتدائی حالات

 Ø¢Ù¾ Ú©Û’ والد ماجد جناب حاجی مختار احمد صاحب گولڑÛ� شریÙ� والوں سے بیعت تھے اور حلیم الطبع اور دریا دل انسان تھے ۔آپ Ú©Û’ دادا جان Ù�ضل دین صاحب قادری سلسلÛ� Ú©Û’ ایک صاحب حال بزرگ گزرے Û�یں Û” اس کا اندازÛ� مندرجÛ� ذیل واقعات سے بخوبی لگایا جا سکتا Û�Û’ Û” حضور قبلÛ� چادر والی سرکارؒ Ú©Û’ دست حق پر بیعت Û�ونے Ú©Û’ Ú©Ú†Ú¾ عرصÛ� بعد ایک دن آپ Ú©ÛŒ ملاقات گوجرانوالÛ� Ø´Û�رسے آئے Û�وئے ایک صاحبÙ� حال درویش سے Û�وئی انÛ�ÙˆÚº ( بزرگ) Ù†Û’ جب آپ Ú©Ùˆ دیکھا تو دیکھتے Û�ÛŒ بے اختیار Ú©Û�Ù†Û’ Ù„Ú¯Û’ Û” سبحان اللÛ� ØŒ سبحان اللÛ� ØŒ میں آپ Ú©Û’ جسم میں دو قسم Ú©Û’ انوار Ú©Û’ دریا بÛ�تے Û�وئے دیکھ رÛ�ا Û�ÙˆÚº Û”

ایک جانب نقشبندی سلسل� کا �یض اور دوسری جانب قادری سلسل� کا �یض ۔ آپ نے عرض کی حضور نقشبندی سلسل� کے �یض کی تو سمجھ آگئی (کیونک� آپ نقشبندی� سلسل� میں بیعت �وئے تھے ) لیکن قادری سلسل� کا �یض ی� بات میری سمجھ میں ن�یں آئی ۔ تو بزرگ نے �رمایا آپ کے آباؤ اجداد میں کوئی قادری سلسل� کے بزرگ گزرے �یں، ی� ان�یں کی جانب سے وراثتی �یض �ے ۔ جب آپ واپس گھر تشری� لائے تو والد� محترم� سے سارا واقع� بیان �رمایا تب آپ کی والد� محترم� نے آپ کو بتایا ک� آپ کے دادا جان قادری سلسل� میں بیعت تھے اور ایک صاحب حال درویش بزرگ گزرے �یں ۔یقیناًی� وراثتی �یض �ی کا اعجاز تھا ک� آپ کے دادا حضور جو ک� آپ کی پیدائش سے پ�لے �ی و�ات پا چکے تھے، آپ ان کا حلی� مبارک ، عادات واطوار اور روزمر� کے معمولات کے متعلق ایسے بتا تے تھے گویا سب کچھ اپنی آنکھوں سے دیکھا �و ،اور ا�ل خان� بھی ان باتوں پر ب�ت زیاد� حیران �وتے تھے ۔

آپ Ú©Û’ دادا جان Ú©ÛŒ بزرگی سے Û�ÛŒ متعلق ایک واقعÛ� Û�Û’ Ú©Û� ایک دن قبرستان ( نزد پبلک Û�ائی سکول خانیوال ) کا گورکن آپ Ú©Û’ والد صاحب Ú©ÛŒ دکان پر آیا اور آتے Û�ÛŒ ان سے Ú©Û�Ù†Û’ لگا Û” سبحان اللÛ� کیا شان Û�Û’ آپ Ú©Û’ والد محترم Ú©ÛŒ Û” میں حیران Û�ÙˆÚº Ú©Û� ÙˆÛ� اتنی محبوب Û�ستی Û�یں Ú©Û� ان Ú©Û’ Ø·Ù�یل آج زندگی میں Ù¾Û�Ù„ÛŒ بار حضور قبلÛ� غوث الا عظم سرکار Ø’ Ù†Û’ مجھے اپنی زیارت سے نوازا Û” پھر اس Ù†Û’ بتایا Ú©Û� آج رات خواب میں حضرت غوث الا عظم سرکار Ø’ تشریÙ� لائے اور مجھے سے Ù�رمایا ’’ کیا تمÛ�یں علم Ù†Û�یں Ú©Û� Û�مارے ایک خاص آدمی Ù�ضل دین صاحب کا مکان ( قبر مبارک بارش Ú©ÛŒ وجÛ� سے ) Ú©Ú†Ú¾ شکستÛ� Û�Ùˆ گیا Û�Û’ پھر مجھے قبر مبارک دکھاتے Û�وئے Ù�رمایا اسے ٹھیک کرو ‘‘ اور میں Ù†Û’ جب صبح قبرستان میں جاکر دیکھا تو واقعی ایسا Û�ÛŒ تھا Û” چنانچÛ� میں Ù†Û’ Ù�وراً آپ Ú©Û’ Ø­Ú©Ù… Ú©ÛŒ تعمیل Ú©ÛŒ Û” اسی طرح ایک مرتبÛ� حضرت مولانا سردار احمد صاحب Ø’ اسی قبرستان سے اپنے عقید تمندوں Ú©Û’ Û�مراÛ� گذر رÛ�Û’ تھے جب ÙˆÛ� آپ Ú©Û’ دادا حضور Ú©ÛŒ قبر انور Ú©Û’ قریب Ù¾Û�Ù†Ú†Û’ تو انÛ�ÙˆÚº Ù†Û’ اپنے مریدین سے Ù�رمایا۔

’’ÛŒÛ� Û�مارے سلسلÛ� Ú©Û’ درویش Û�یں ØŒ تم ÛŒÛ�اں آیا کرو اور ان Ú©Û’ وسیلے سے دعا کیا کرو ‘‘Û”

آپ بچپن میں اکثر خواب میں اپنے آپ کو مجذوبیت اور دیوانگی کی حالت میں دیکھتے گویا آئند� کی پاکیز� زندگی کی بشارت خدا تعالیٰ نے بچپن �ی میں دے دی تھی ۔ آپ نے چمن زندگی کی کچھ زیاد� ب�اریں بھی ن� دیکھیں تھیں ک� والد� اس ج�ان �انی سے کوچ کر گئیں۔ الل� تعالیٰ کی رحمت بے پایاں جب کسی شخص کے ساتھ �وتی �ے تو اس کی کایا �ی پلٹ جاتی �ے ۔ بار�ا ایسا �وا ک� جب بھی ( لعوو ل�ب) کی جانب مائل �وئے تو خدا تعالیٰ نے رویائے صادق� کے ذریعے را�بری �رمائی۔ انسان خدا تعالیٰ سے اپنا تعلق یوں پاکر آئند� غلطیوں سے مح�وظ �و جاتا �ے ۔