ولادتِ باسعادت

 آپ کی ولادت با سعادت خانیوال شہر کے ایک معزز اور متمول گھرانے میں 1960ء کے آخری مہینوں میں ہوئی لیکن آپ سرکار کے مریدین آپ کا جشن ولادت ماہ جولائی کی2تاریخ کے بعد آنے والی پہلی جمعرات کو مناتے ہیں۔اس کی وجہ یہ ہے کہ بذریعہ خواب 1991ء میں مرشد اکمل جناب صدیقی لاثانی سرکار کو اللہ تعالیٰ کی طرف سے حکم ہوا کہ لوگ ہر سال سالگرہ ( برتھ ڈے)مناتے ہیں تم انکی مخالفت کرتے ہوئے ہر سال جولائی کی پہلی جمعرات جشن ولادت کے نام سے سالانہ محفل کا انعقاد کرو۔کیوں کہ آپ کی روح جولائی کے پہلے ہفتے میں اس دنیا میں ( ماں کے پیٹ ) میں آئی ۔ 

آپ کا اسم گرامی مسعود احمد رکھا گیاجو بعد ازاں صدیقی لاثانی سرکار کے پر وقار لقب سے آسمانِ فقر پر پوری آب وتاب کے ساتھ جلوہ افروز ہوا۔اکثر عقیدت مندوں کو عالم رویا ء اور مشاہدات میں جب بھی حضور نبی کریم ﷺ اور بزرگان دین کرم فرماتے ہوئے قبلہ سخی سلطان پیرو مرشد حاجی مسعود احمدکے متعلق ارشاد فرماتے تو نام کی بجائے ’’لاثانی سرکار ‘‘ کے خطاب سے ارشاد فرماتے اور جب اس کے متعلق آپ سے دریافت کیا گیا تو آپ نے فرمایا ۔ 

’’درویش کا ایک نام زمین پر ہوتا ہے اور ایک روحانی دنیا ( آسمانوں میں ) اور اس فقیر کو بھی حضور نبی کریم ﷺ نے روحانی نام یعنی ’’لاثانی سرکار ‘‘ کے خطاب سے نوازا ہے ۔ یہی وجہ ہے کہ اہل سلسلہ بھی بزرگان دین کے فرمان کے مطابق آپ کو لا ثانی سرکار کہہ کر مخاطب کرتے ہیں ۔ اسی طرح امیر المومنین حضرت سیدنا صدیق اکبرؓ نے آپ سرکار کو ’’ صدیقی ‘‘ کا لقب عطا فرمایا ۔